میرے مطابق

قوم پرستوں نے ہمیشہ پختون کشی میں بیرونی حملہ آوروں کا ساتھ دیا -عادل فیاض

  • 16
    Shares

برطانیہ اپنے لشکر کے ساتھ آیا آپ نے دیر سوات دے کر ڈیل کر لی.

انگریز یہاں سے جارہا تھا تو آپ کو یاد آیا کہ او پختون تو ہمارے بھائی ہیں. ہم ایک زبان بولتے ہیں،

ایک کلچر رکھتے اور ایک قوم ہیں. آپ نے پاکستان ماننے سے انکار کر دیا اور پختونستان کی تحریک چلائی. یہ الگ بات ہے کہ ہندوستان کے ساتھ رہنے میں آپ کی پختون ولی کو کوئی نقصان نہیں تھا. 

خیر روس اپنے لاؤ لشکر کے ساتھ آیا آپ نے ویلکم کیا اور آپ اس امید پر تھے کہ وہ پاکستان آئے گا اور آپ کا خواب پورا ہوگا. روس اپنے ٹکروں کے ساتھ واپس چلا گیا آپ کو پھر خیال آیا کہ پختونوں کے ساتھ ظلم ہوا. لیکن یہ ظلم مجاہدین نے کیا ہے. انہوں نے بندوق کلچر متعارف کروایا. جب روس جارحیت کر رہا تھا تو آپ بھی انکے ” سرخ لباس” میں ملبوس تھے. لیکن ظاہر ہے آپ تو دہشت گردی کے خلاف جنگ کر رہے تھے. 

امریکہ اپنی ساری ٹیکنالوجی کے ساتھ افغانستان پر حملہ آور ہوا تو آپ کو پختونوں کا خیال نہیں آیا. آپ نظریاتی طور پر سرمایہ درانہ نظام کے مخالف تھے لیکن آپ نے ان کے ساتھ مل کر ثابت کیا کہ افغانستان میں لڑنے والے دہشت گرد ہیں انکو امریکہ سے مفاہمت کرنی چاہیے. 

پاکستان میں آپ نے کہا کہ پوری پختون بیلٹ میں دہشت گرد چھپبے ہوئے ہیں. آپریشن کیا جائے. آپریشن ہوا پختون متاثر ہوا تو آپ کو یاد آیا کہ یہ تو ہمارے بھائی تھے. سارا ملبہ فوج پر ڈال کر آپ پھر سے پختونوں کو ایک دفعہ پھر بے وقوف بنانے چل پڑے.

ابھی امریکہ جارہا ہے. آپ کا اصرار ہے کہ امریکہ کو یہاں رہنا چاہیے کیوں؟ کیوں کہ امریکہ تو امن قائم کرنے آیا تھا اور امن تو ابھی مکمل نہیں بحال نہیں ہوا. افغانستان میں آپ کو پختونوں کا قتل عام بھی امن کے نام برداشت کر سکتے ہیں اور افغان راؤ انوروں کو ہیرو بنا سکتے ہیں. کیوں؟ 

کیونکہ آپ کے نزدیک بیرونی حملہ آوروں کی جارحیت جارحیت نہیں. اسکا ظلم ظلم نہیں. آپ نے ہمیشہ بیرونی قوتوں کو سپورٹ کر کے پختونوں کی نسل کشی کی. آپ نے ہمیشہ پختونوں کو زخم لگا کر انکے زخموں پر نمک کے ساتھ مرہم رکھنے کی کوشش. کیونکہ پختون زخمی ہوگا تو آپ کی قومیت کے نام پر سیاست چلے گئی.


  • 16
    Shares

Add Comment

Click here to post a comment