مغرب کے ٹارگٹ — انس انیس


15211797_343929095965789_1974900382_n
جاوید چوہدری کی کتاب؛ گئے دنوں کے سورج؛ ان کے انٹرویوز اور مختلف شخصیات پر رقم کیے گئے ان کے شگفتہ قلم کے شہ پارے ہیں جن کو انہوں نے یکجا کر کے گئے دنوں کے سورج کے نام سے شائع کیا؛ سیاسی حالات کے بارے میں ایک سوال کا جواب انہوں نے یوں دیا؛؛ میں جب پاکستان کے سیاسی حالات دیکھتا ہوں تو مجھے محسوس ہوتا ہے پاکستان پر امریکہ کا بہت اثرونفوذ ہے میں دیکھ رہا ہوں اب پاکستان کے علمائے کرام؛ فوج اور نیو کلیر پلانٹ امریکہ کے خاص ٹارگٹ ہیں پہلے ٹارگٹ پر وہ کام کر چکے ہیں ہمارے مولوی امریکہ کا پہلا نشانہ ہیں ان کو ختم کرنے کے لیے ہر قسم کی تکنیک استعمال کی جا رہی ہے؛ امریکہ ان پر بے تحاشا پیسہ خرچ کرے گا؛ معاشرے کو لبرل بنانے کے لیے مولویوں کے خلاف سارے عوامل بروئے کار لائے جائیں گے ان پر براہ راست حملہ بھی کرنا پڑا تو بھی یہ لوگ گریز نہیں کریں گے ان کی پوری کوشش ہو گی کہ پاکستان سے مذہبی عنصر ختم ہو جائے مذہب کو ختم کرنے کے لیے بڑی بنیادی تبدیلیاں لائی جا رہی ہیں مثلاً آپ عنقریب دیکھیں گے ملک سے شراب پر پابندی ختم ہو جائے گی؛ ملک میں عملاً یہ پابندی ختم ہو چکی ہے لیکن حکومت نے ابھی تک یہ اعلان نہیں کیا حکومت کسی وقت بھی یہ اعلان کر سکتی ہے؛؛ قارئین آج کا ماحول ہم دیکھ لیں کل جو ملا عزت وتکریم سے دیکھا جاتا تھا آج اس کو دہشتگرد کہا جاتا ہے اس پر قل اعوذیے؛ جاہل ناکارہ خیراتی کی پھبتیاں کسی جاتی ہیں جس ملا نے کبھی ہڑتال نہیں کی محدود سی تنخواہ پر اپنوں بیگانوں کی بےرخیوں بیوفائیوں معاشرے کی سنگدلی کے باوجود اپنا فریضہ ادا کر رہا ہے؛ حکمران طبقہ آئے دن ملک کو لبرل ازم کی طرف لے جانے پر گامزن ہے وزیر اعظم کا لبرل اسٹیٹ بنانے کا اعلان ہو یا شہباز شریف کی عملی کوششیں؛ وزیر اعلی برائے نام مراد علی شاہ کا عزم ہو یا پنجاب یونیورسٹی میں رقص وسرور کی محفلیں ہوں؛ اہل علم حضرات کی آئے دن بلاوجہ تحقیر وتذلیل کرنا ہو یہ تمام عوامل اس امر کی نشاندہی کرتے ہیں کہ امریکہ ومغرب کے ایجنڈے پر بھر پور کام ہو رہا ہےہمارے حکمران اسلام کے نام ووٹ لیکر اسلام ہی کے قلعے پر نقب زنی کرتے ہیں؛ اگر اسی طرح بے شعور زندگی گزارتے رہے تو وہ وقت دور نہیں جب تہذیب و ثقافت کا جنازہ اس ملک سے نکل جائے گا اور یہ ملک مغربی تہذیب کی آماجگاہ بن جائے گا؛


You may also like...

1 Response

  1. ابو ثمامہ احسن says:

    بہت خوب

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *