لکھاری لکھاری » لکھاری » ڈونلڈ ٹرمپ کو معلوم نہیں کہ اس کا پالا کس قوم سے پڑا ہے-ضیغم اعوان

ad

لکھاری میرے مطابق

ڈونلڈ ٹرمپ کو معلوم نہیں کہ اس کا پالا کس قوم سے پڑا ہے-ضیغم اعوان


ضیغم اعوان-Zaigham Awanڈونلڈ ٹرمپ کی دھمکی کا جواب سننے سے پہلے ایک واقعہ سناتا ہوں
یہ کافی تاریخی واقعہ ہےشائد آپ نے سن رکھا ہو

بینظیر کے دوسرے دور حکومت میں آئی ایم ایف سے قرضے کے لیے درخواست دی گئی قرضہ بلینز میں تھا (یاد نہیں ہے فی الوقت) یا ملینز میں خیر وہ درخواست چوں چڑاں کرکےاور دوسرے ممالک کی سفارش سے دوماہ بعد قبول ہوگئی
جوں ہی درخواست قبول ہوئی ٹھیک دوگھنٹے بعد سٹیٹ بنک کو چند کمپیوٹر کے ہندسوں میں میسج موصول ہوا کہ آپ کو اتنا قرضہ دے دیا جا چکا ہے اب آپ آئی ایم ایف کے مقروض ہو چکے ہیں

نا ہی ہمیں کوئی قرضے میں سونا دیا گیا نا ہی تیل دیا گیا اور نا کچھ اور یوز ایبل چیز دی گئی اور ہم فقط چند ڈیجیٹل ہندسوں کی وصولی پہ مقروض ہوگۓ
اور بعد میں وہ قرضہ پھر یا تو زرمبادلہ کی صورت میں واپس کیا یا کبھی سونے وغیرہ کی صورت میں

تو جناب یہ ہے یہودیوں کا معاشی نظام جو صرف نوٹ چھاپنے کی اجازت دینے پر ملکوں کو مقروض بنا لیتا ہے اور بعد مییں وہ ممالک سالوں اس قرضے کی چکی میں پستے رہتے ہیں اور قرضہ تو ادا ہوجاتا ہے مگر سود نہیں ختم ہوتا

اب جبکہ امریکہ ہمیں کہہ رہا ہے کہ اس نے ہمیں پیسے دئے توجان لیں وہ پیسے عیدی یا پھر شبرات کی خوشی میں ہیں دئیے بلکہ وہ ہمارا انفراسٹرکچر استمعال کرنے پر دئے وہ ہماری مزدوری تھی وہ پیسے دینا انکا حق تھا

اور رہی بات آئ ایم ایف کے قرضں کی تو ان قرضوں کی کوئی Physical Evidence ہے ہی نہیں تو ہم کیونکر واپس کریں ہم بھی اسی طرح آپکو کمپیوٹر سے چند صفرے لکھ کر بھیج دیتے ہیں آپ بھی نوٹ چھاپ لینا ہمارا قرضہ کلیر
اور اگر ہم قرضے واپس نا بھی کریں تو امریکہ ہمارا کچھ بھی نہیں اکھاڑ سکتا زیادہ سے زیادہ پابندیاں لگاۓ گا؟

تو خوشی سے لگاۓ
لیکن پھر یہ بھی یاد رکھے کہ کابل میں اسکے ہزاروں فوجی ہیں لیکن ساتھ ہمارے لاکھوں طالبان بھی چاہے وہ اچھے ہیں یا برے پاکستان کی ایک پکار پہ کابل کو کسی قابل نہیں چھوڑیں گے بلکہ تورا بورا سے بھی بدتر کردیں گی
پھر آپ سوچیں گےکہ کس قوم سے واسطہ پڑ گیا ہے
اور یاد رکھیں ہم چنے کھا کر اور نسوار منہ میں رکھ کر بھی لڑ لیتے ہیں لیکن اگر آپکے پھوجیوں کو بریڈ نا ملی تو وہ کیسے لڑیں گۓ؟
Tell Me you Bastured American Donkeys
تمہارے فوجی بریڈ کھانے کے بعد ہی لڑیں گے اور انکی بریڈ طورخم سے جاتی ہے
اس لیے دھمکیاں نا لگاؤ کیونکہ ایک دھمکی ضیاالحق کو بھی لگآئی گئی تھی مگر پینٹیں گیلی بھی کردیں تھیں ضیا نے
یاد رکھنا
ڈبل روٹی کھانے والی قوم
تم صرف پیسے کے بل بوتے پہ بولتے ہو اور ہم اپنی طاقت کے بل پر (اپنے ‘پٹ’ پر ہاتھ مارتے ہوۓ)