بابا کوڈا اور جماعت اسلامی

  • 14
    Shares

بابا کوڈا کو میں بالکل بھی نہیں پڑھتا اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ ایمان والا بداخلاق نہیں ہوسکتا اور بابا کوڈا سچ لکھے یا جھوٹ لیکن بداخلاقی میں اپنا ثانی نہیں رکھتا ہے۔حال ہی میں بابے کوڈے نے جماعت اسلامی کے متعلق جھوٹ لکھتے ہوئے کہا کہ جماعت اسلامی 1977میں باقاعدہ اسٹیبلشمنٹ کے حرم میں داخل ہوئی اور 1993میں اسلامک فرنٹ بنا کر پیپلزپارٹی کے اقتدار کی راہ ہموار کی۔
[abc]
بالکل ہی متضاد بات ہے 1988میں اگر اسلامی جمہوری اتحاد اسٹیبلشمنٹ نے پی پی پی کی حکومت گرانے کیلئے بنایا جس کی سربراہی نوازشریف نے کی تو یہ کیسے ممکن ہے کہ آئی جے آئی کے جدوجہد کے بعد وزیر اعظم بننے والے نوازشریف کا ساتھ چھوڑ کر اسٹیبلشمنٹ کے کہنے پر پی پی ہی کی حکومت کی راہ ہموار کی جائے۔

اسلامک فرنٹ نہ بنتا تو بھی میاں نواز شریف ناکام ہوتے

اطلاع کیلئے عرض ہے کہ پی پی نے ویسے بھی نواز شریف کیلئے حکومت کرنا مشکل کردیا تھا اور 6 اکتوبر 1993 کو صدرمملکت غلام اسحٰق خان اور وزیر اعظم نواز شریف نے آپسی کشمکش کے باعث استعفٰی دیا اور جنرل الیکشن میں ن لیگ نے سب سے ذیادہ ووٹ لئے لیکن پی پی سیٹوں میں بازی لے گئی۔

93 کے الیکشن میں اسلامک جمہوری محاز ،متحدہ دینی محاز اور پاکستان اسلامک فرنٹ کے نام پر مختلف جماعتوں نے الگ الگ اتحاد بنائے ،اسلامک فرنٹ نے صرف چھ لاکھ 45ہزار ووٹ لئے، جبکہ اسلامی جمہوری محاز 4لاکھ 80ہزار اور متحدہ دینی محاز 2لاکھ 16 ہزار ووٹ لے سکا۔

جبکہ مسلم لیگ ن نے 79لاکھ 80ہزار ووٹ لئے اور پی پی نے 75لاکھ 78ہزار ووٹ لئے، مسلم لیگ جے نے 7لاکھ 81 ہزار ووٹ لئے۔
پی پی نے 89 سیٹیں مسلم لیگ ن نے 73 سیٹیں، اسلامک فرنٹ 3 سیٹیں، دینی محاز نے 4 سیٹیں لیں۔
[abc]

اب کوئی اندھا لولا لنگڑا بھی سمجھ سکتا ہے کہ اسلامک فرنٹ نے کیسے پی پی پی کی حکومت کی راہ ہموار کی جبکہ ایسا ممکن ہی نہیں تھا۔

پاکستان نیشنل الائنس میں سب جماعتیں تھیں

جبکہ 77 میں پاکستان نیشنل الائنس میں بھٹو کے خلاف صرف جماعت اسلامی نہیں تھی بلکہ اس وقت کی تمام دینی و مذہبی اور سیاسی جماعتیں بھی اس الائنس کا حصہ تھیں۔اور مزے کی بات کہ ضیاء کے خلاف مہم بھی جماعت اسلامی نے چلائی اور پنجاب یونیورسٹی سے اسلامی جمعیت طلبہ نے جنرل ضیاء کی طلبہ یونینز پف پابندی کے خلاف ریلی نکالی اور ملک بھر میں جنرل ضیاء کے خلاف احتجاج کیا جمعیت کے لوگ پابند سلاسل بھی رہے۔

ہاں اسٹیبلشمنٹ کا ساتھ 71 کی جنگ میں البدر اور الشمس کی صورت صالح اور باکردار نوجوانوں نے وطن کی مٹی کیلئے اپنا خون بہا کرضرور دیا ہے۔
[abc]
70 اور 80 کی دہائی کی جماعت نے جو جنریشن پیدا کی اس میں تحریک انصاف کے مرکزی رہنماء اعجاز چوہدری، عارف علوی، اسد قیصر، علی محمد خان، فیاض الحسن چوہان سمیت تحریک انصاف کے چوٹی کے رہنماء بھی شامل ہیں۔

باقی احتساب سب کاہونا چاہیے جماعت اسلامی نے جائز مطالبہ کیا ہے اس پر تو آپ کو لبیک کہنا چاہیے تھا، جماعت اسلامی کو لوگ ووٹ دیتے ہیں یا نہیں دیتے الگ بات ہے لیکن یہ آپ کی غلط فہمی ہے کہ جماعتی ن لیگ کو ووٹ دیتے ہیں۔شاید آپ کے پاس کوئی جناتی چراغ ہے جو سب دکھادیتا ہے۔

پاناما کیس میں جماعت اسلامی نے قانونی جنگ لڑی

جماعت اسلامی نے فیس بک پر بڑھکیں مارنے کے بجائے قانونی کیس عدالت میں لڑا عمران خان کا پریشر ضرور تھا لیکن قانونی نقطہ نگاہ سے جماعت اسلامی کا کیس مضبوط تھا، ویسے وہ یاد آیا اگر جماعت اسٹیبلشمنٹ کی لونڈی ہے تو منورحسن کا بیان آپ کی بھونڈی بات کی نفی کردیتا ہے۔

[abc]

باقی سرکار خیبر بینک پر بھی کچھ دوبول نکال دیں کرپشن تو کرپشن ہوتی ہے میاں کرے یا خٹک کرے۔باقی آپ کوڈے خود بھول گئے فوج کے خلاف کتنی بکواس کی تھی، ایسی ایسی دلیلیں دی تھیں کہ فوجی جان دیکر کوئی احسان نہیں کرتے تنخواہ لیتے ہیں وغیرہ وغیرہ۔

جماعت اسلامی  معلوم اور نامعلوم بابا کوڈا کون معلوم نہیں

اچھاجماعت اسلامی کب بنی 21 اگست 1947کو ۔ جماعت بنائی سید مودودی رح نے، سید مودودی رح کا پورا شجرہ موجود ہے، جماعت کی پوری تاریخ موجود ہے،جنرل اسکندر مرزا، صدر ایوب، جنرل یحیٰی،بھٹو ، اور جنرل ضیاء کے دور میں جماعت کے رہنماء کسی نہ کسی صورت پابند سلاسل رہے تاریخ میں درج ہے۔

آخر میں ہی کیوں حساب دوں

مشرف کا ساتھ سب نے بشمول عمران خاننے دیا غلط صحیح الگ بحث ہے یہ سب تاریخ کا حصہ ہے۔
[abc]
اب بابا کوڈا کون ہے؟؟ معلوم نہیں،،


  • 14
    Shares

You may also like...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *